Taleemi Budget barhaao!

Don’t just put education on money, put money on education.
Join our campaign to demand an increase in the education budget.

Pakistan currently allocates less than 2% of the Gross Domestic Product (GDP) to its education sector. This makes Pakistan’s spending on education one of the lowest in the world. Despite a constitutional guarantee of free and compulsory education to all children aged between 5 and 16 years, a staggering 25 million children remain out of school. Ghost schools, teacher absenteeism, lack of adequate infrastructure and poor quality of education are further plaguing the education system. To a large extent, the majority of issues facing the education sector in Pakistan are either linked to a lack of investment or ineffective spending by the provincial and district authorities. 

Political Promises

In the 2013 general election, all major political parties promised to allocate at least 4% of GDP to education, yet this promise remains unfulfilled with no plans announced for how this goal would be accomplished by 2018. The promise for increasing the national budget for education from 2% to 4% cannot be achieved without political will.

A recently published UNESCO report mentioned Pakistan as being amongst the nations farthest from achieving the originally pledged education goals for 2015. 

As the 2015-16 national budget announcement draws near, the national discourse will be taken up by debates around competing priorities. Unfortunately, education is not given the emphasis it deserves during the budget debate and is barely touched upon by decision makers and the media. The national budget is the ultimate expression of political will and in this budget cycle the politicians and decision makers have an opportunity to prove that they care about improving education in Pakistan.

Alif Ailaan’s advertising campaign shows that we have put the image of an education institution on the Rs.1000 note, demonstrating that we hold education in high regard. Yet, ironically we have failed to invest in education.  Join Alif Ailaan in reminding the politicians of their promise to increase the spending on education.

What you can do:

As a concerned citizen of Pakistan, you can help ensure that this budget season education is discussed as a top national priority.

The Alif Ailaan campaign has compiled data from 148 districts in Pakistan and urges citizens to use this data to make the case for increased education spending.

Write a letter to your MNA/MPAs to them them know about the state of education in your province and to urge them to ensure that the education budget is increased to 4% of the GDP.

بجٹ مہم ہم نے تعلیم کو پیسوں پر لگایا ہے لیکن ہمیں اپنے پیسوں کو تعلیم پر لگانا ہے۔ آئیں ہمارے ساتھ مل کر تعلیمی اخراجات قومی پیداوار (جی ڈی پی) کے4 فیصد تک بڑھانے کا مطالبہ کریں۔

پاکستان اپنے جی ڈی پی کا 2 فیصد سے بھی کم حصہ تعلیم پر خرچ کرتا ہے جس کی وجہ سے پاکستان دنیا میں تعلیم پر سب سے کم خرچ کرنے والے ممالک میں شمار ہوتاہے۔ 5 سے 16 سال کی عمر کے بچوں کی مفت اور لازمی تعلیم کی آئینی ضمانت کے باوجودڈھائی کروڑ بچے اسکولوں سے باہر ہیں۔ فرضی اسکول، اساتذہ کی غیر حاضری، انفراسٹرکچرکی کمی اور ناقص معیارِ تعلیم ہمارے نظامِ تعلیم میں مزید بگاڑ پیدا کر رہے ہیں۔مجموعی طور پر، پاکستان کے تعلیمی شعبے کے اکثر مسائل کا تعلق وسائل کی کمی یا صوبائی اورضلعی منتظمین کی طرف سے وسائل کے نامناسب استعمال سے ہے۔

سیاسی وعدے

2013 کے عام انتخابات میں تمام بڑی سیاسی جماعتوں نے تعلیم کے لیے کم از کم جی ڈی پی کا 4 فیصد مختص کرنے کاوعدہ کیا تھا لیکن ابھی تک یہ وعدہ پورا نہیں ہوا اور نہ ہی 2018 تک اس وعدے کو پورا کرنے کے لیے کسی منصوبے کا اعلان کیا گیا ہے۔ تعلیم کے لیے قومی بجٹ کو 2 فیصد سے 4 فیصد تک بڑھانے کا وعدہ سیاسی عزم کے بغیر پورا نہیں کیا جا سکتا۔

یونیسکو کی حال ہی میں شائع ہونےوالی ایک رپورٹ میں پاکستان کو اُن ممالک میں شامل کیا گیا ہے جو 2015 تک اپنے تعلیمی اہداف حاصل کرنے کی منزل سے بہت دور ہیں۔

اب جبکہ-16 2015 کے قومی بجٹ کا اعلان ہونے والا ہے، قومی سطح کے مباحثوں میں قومی ترجیحات کے حوالے سے گفتگو کی جائے گی۔ بد قسمتی سے بجٹ کے مباحثوں میں تعلیم پر اتنی توجہ نہیں دی گئی جتنی دی جانی چاہیےتھی ۔ اس کے علاوہ پالیسی سازوں اور میڈیا نے بھی اس پر بہت کم بات کی ہے۔ قومی بجٹ سیاسی عزم کے اظہار کا ذریعہ ہوتا ہے اور اس بجٹ کے دوران سیاستدانوں اور پالیسی سازوں کے پاس موقع ہے کہ یہ ثابت کر سکیں کہ وہ پاکستان میں تعلیم کی صورتحال کو بہتر کرنا چاہتے ہیں۔

الف اعلان کی اشتہاری مہم میں دکھایا گیا ہے کہ ہم نے ایک تعلیمی ادارے کی تصویر ایک ہزار روپے کے نوٹ پر لگائی ہے جو یہ ظاہر کرتی ہے کہ ہم تعلیم کو بہت اہمیت دیتے ہیں۔ لیکن مضحکہ خیز بات یہ ہے کہ ہم تعلیم پرخرچ کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ سیاستدانوں کے تعلیمی اخراجات میں اضافے کے وعدے کو یاد دلانے کے لیے الف اعلان کا ساتھ دیں۔

آپ کیا کر سکتے ہیں

پاکستان کے ایک ذمہ دار شہری ہونے کے ناطے، آپ اس بات کو یقینی بنانے میں مدد کر سکتے ہیں کہ اس بجٹ میں تعلیم کو پہلی قومی ترجیح بنایا جائے۔

اپنے وزیرِخزانہ کو خط لکھیں اور اُنہیں اپنے ضلع کی تعلیمی صورتحال کے بارے میں آگاہ کریں۔ اس کے علاوہ ان سے مطالبہ کریں کہ اس دفعہ تعلیمی بجٹ جی ڈی پی کے 4 فیصد تک بڑھایا جائے۔ الف اعلان نے پاکستان کے 148 اضلاع کے اعدادوشمار اکٹھے کیے ہیں اور تمام شہریوں کو ترغیب دیتی ہے کہ وہ ان اعدادوشمار کو استعمال کرتے ہوئے تعلیمی اخراجات میں اضافے کا مطالبہ کریں۔