Meesaq-e-Ilm

In the name of Allah, the most Beneficent, the most Merciful


MEESAQ-E-ILM

Preamble

We, the teachers of Pakistan, individually and collectively, have come together to express our belief in and commitment to: a literate and educated Pakistan; meaningful and effective education; and a transformation of the teaching profession into one that is not only rewarding but also ensures that Pakistani children get a quality education.

We, the teachers of Pakistan, agree on the values to be adopted and the practical steps to be taken for the realization of these goals, and term them the Meesaq-e-Ilm.

We, the teachers of Pakistan, are aware of and believe in the following:

  • Our religious and societal traditions give teachers an esteemed status and expect them to be model citizens.
  • The children we teach, the families we serve, the schools we work at and the communities we are a part of form the backbone of Pakistan’s future.
  • If we succeed in performing our duties, Pakistan will have a bright future. If we fail, the nation fails.
  • The children we teach are guarantors of a peaceful and prosperous Pakistan.
  • Teachers who are lifelong seekers and promoters of knowledge are not only model citizens but also assets to the community and the nation.

We the teachers of Pakistan want / propose that:

  • Teachers need stable and predictable career paths that will allow them to focus on developing their knowledge, acquiring teaching skills, and ensuring the best learning outcomes possible for students.
  • Teachers need working environments where they can perform their duties with devotion and dedication.
  • Teachers need a conducive environment to work in; clear service rules and accountability mechanisms to be able to fulfill their duties.
  • Teachers need freedom from the burden of non-teaching duties so that they focus all their energies on teaching.
  • Teachers need to be provided equal opportunities for personal and professional development irrespective of age, gender, religion, ethnicity or geographical location.
  • Teachers require an effective transfers and postings regime designed to cater to the needs of students and communities, not for political rewards or punishments.
  • Teachers need to be recognized as key stakeholders in decisions related to teaching, technologies, curriculum and assessment reforms, textbooks development and education policy making.

We, the Teachers of Pakistan, wholeheartedly believe:

  • Pakistan’s children need innovative and professional teachers who can not only provide quality education but are also hard-working, diligent and punctual.
  • Pakistan’s children need teachers who are lifelong learners themselves and are therefore individually and collectively focused on better student learning outcomes through active learning and critical thinking.
  • Pakistan’s children need teachers who are motivated to create a conducive and inclusive learning environment committed to the unique learning potential of each child.
  • Pakistan's children need teachers who will prepare them sufficiently to compete successfully both nationally and internationally in academics and employment.
  • Pakistan's children need teachers who will provide ethics and values to prepare responsible citizens who are open to diversity of ideas, cultures, religions and people.
  • Pakistan’s children need teachers who are not only present at school and in the classroom, but also as leading members of their communities, and assets to Pakistani families.
  • Pakistan’s children need teachers who are recognized for their abilities, skills, and professional integrity.

 

بسم اللہ الرحٰمن الرحیم
میثاقِ علم

ابتدائیہ :

ہم ‘ پاکستان کے اساتذہ آج آنفرادی اور اجتماعی حیثیت میں اس عزم اور یقین کے اظہار کے لئے اکٹھے ہوئے ہیں کہ :
پاکستان کو خواندہ اور تعلیم یافتہ بنانا ہے; تعلیمی عمل کو با مقصد اور کارآمد بنانا ہے ; تدریس کو ایک ایسے مؤثر شعبہ میں تبدیل کرنا ہے جو نہ صرف اساتذہ کیلئے فائدہ مند ہو بلکہ معیاری تعلیم کی فراہمی کو بھی یقینی بناتا ہو۔

ہم ‘ پاکستان کے اساتذہ
ان مقاصد کے حصول کی خاطردرج ذیل بنیادی اقدار اور عملی اقدامات پر متفق ہیں اور اسے میثاقِ علم کا نام دیتے ہیں۔

ہم‘ پاکستان کے اساتذہ آگاہ ہیں اور یقین رکھتے ہیں کہ :

  • ہماری مذہبی اور معاشرتی روایات اساتذہ کو ایک اعلیٰ و عرفیٰ مقام دیتی ہیں اور اساتذہ سے یہ توقع کی جاتی ہے کہ وہ مثالی شہری ہوں۔
  • وہ بچے جن کو ہم تعلیم دیتے ہیں ‘ عوام جن کیلئے ہم خدمات انجام دیتے ہیں ‘ سکول جہاں ہم کام کرتے ہیں اور وہ معاشرہ جس کا ہم حصہ ہیں پاکستان کے مستقبل کی بنیاد ہیں۔
  • اگر ہم اپنے فرائض کی انجام دہی میں کامیاب رہے تو پاکستان کا مستقبل روشن ہے ‘ بصورت دیگر ہماری ناکامی کا نتیجہ قوم کی ناکامی ہے۔
  • وہ بچے جن کو ہم زیورِ تعلیم سے آراستہ کرتے ہیں ایک خوشحال اور پُرامن پاکستان کی ضمانت ہیں۔
  • ایک استاد جو تاعمر تحصیل و ترویجِ علم میں مصروف رہتا ہے ‘ وہ نہ صرف مثالی شہری بلکہ معاشرہ اور قوم کا ایک قیمتی اثاثہ ہوتا ہے۔


ہم ‘ پاکستان کے اساتذہ مطالبہ کرتے ہیں کہ :

  • اساتذہ کو ملازمت میں متعین شدہ ترقی کا راستہ فراہم کرنے کی ضرورت ہے تاکہ وہ تمام تر توجہ تحصیل و ترویجِ علم ‘ تدریسی صلاحیتوں کے حصول ‘ اور طلباء کی بہترین کارکردگی کو یقینی بنانے پر مرکوز کر سکیں۔
  • اساتذہ کو ایسا ماحول فراہم کیا جائے جہاں وہ اپنے فرائض کو بھرپور لگن، محنت اور احسن طریقہ سے انجام دے سکیں۔
  • اساتذہ کو اپنے فرائض کی انجام دہی کیلئے موزوں ماحول ‘ ملازمت اور جوابدہی کے واضح ضوابط اور طریقہ ہائے کار ‘ کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔
  • اساتذہ کو غیر تدیسی ذمہ داریوں کے بوجھ سے نجات دی جائے تاکہ وہ اپنی تمام توجہ تعلیمی سرگرمیوں پر مرکوز کر سکیں۔
  • اساتذہ کو بلا تفریقِ عمر، صنف، مذہب، قومیت ،اور جغرافیہ ، انفرادی اور پیشہ وارانہ صلاحیتوں کے حصول کے یکساں مواقع فراہم کیے جائیں۔
  • اساتذہ کی تعیناتی اور تبادلہ کیلئے سیاسی جزا اور سزا سے پاک ایک ایسا مؤثر نظام تشکیل دیا جائے جس کا بنیادی مقصد طلباء اور معاشرہ کی ضروریات کوپورا کرتا ہو۔
  • اساتذہ کی تدریس ، پیشہ وارانہ تربیت، نصاب ، امتحانی اصلاحات ، درسی کتب کی تیاری و تدوین اور تعلیمی پالیسی سازی کے ضمن میں کیے جانے والے فیصلوں میں مسلمہ حیثیت کو تسلیم کیا جائے اور اس تمام عمل میں ان کی مؤثر شمولیت کو یقینی بنایا جائے۔


ہم‘ پاکستان کے اساتذہ تہہِ دل سے یہ تسلیم کرتے ہیں کہ :

  • پاکستان کے بچوں کو ایسے اساتذہ کی ضرورت ہے جو نہ صرف معیاری تعلیم فراہم کرسکیں بلکہ جن کا شعار محنت ‘ لگن اور پابندی وقت ہو۔
  • پاکستان کے بچوں کو ایسے اساتذہ کی ضرورت ہے جو خود حصول علم کے عمل کے خواہاں ہوں ‘ اور انفرادی و اجتماعی سطح پر تنقیدی شعور اور عملی تربیت کو استعمال کرتے ہوئے بہتر تعلیمی نتائج حاصل کر سکیں۔
  • پاکستان کے بچوں کو ایسے اساتذہ کی ضرورت ہے جو ایک ہمہ جہت اور سازگار تعلیمی ماحول پیدا کرنے کی لگن رکھتے ہوں جس میں ہر بچے کی سیکھنے کی انفرادی صلاحیتوں کو نکھارا جا سکے۔
  • پاکستان کے بچوں کو ایسے اساتذہ کی ضرورت ہے جو ان کو مقامی اور عالمی سطح پر درکار علمی و روزگار کی ضروریات کے مطابق تیار کر سکیں۔
  • پاکستان کے بچوں کو ایسے اساتذہ کی ضرورت ہے جو ان کو ایسی اقدار اور اصولوں کی عملی تعلیم دے سکیں جو انہیں ایک ایسا ذمہ دار شہری بنا سکے جو متفرق نظریات ‘ ثقافتوں ‘ مذاہب اور معاشرتوں کا شعور رکھتا ہو۔
  • پاکستان کے بچوں کو ایسے اساتذہ کی ضرورت ہے جو نہ صرف کلاس روم اور سکولوں میں موجود ہوں بلکہ معاشرے میں نمایاں کردار کے حامل ہوں اور اپنے سماج کا قیمتی اثاثہ ہوں۔
  • پاکستان کے بچوں کو ایسے اساتذہ کی ضرورت ہے جو اپنی قابلیت ‘ صلاحیتوں اور پیشہ وارانہ ایمانداری کی وجہ سے پہچانے جائیں۔

17 endorsements

Will you endorse?